کارگل میں بہادر پاکستانی افواج کا قاتل مشرف تھا جسے عمران نیازی نے سزا سے بچایا

کارگل میں ہزاروں بہادر فوجیوں کا قاتل مشرف تھا جس نے فوجیوں کو مجاہدین کے روپ میں بھیجا اور بعد میں نہ انکو مزید اسلحہ اور نہ ہی کھانا پہنچایا بلکہ ان افواج پاکستان کو فضائی تحفظ بھی نہیں دیا- بعد میں بھارتی فضائیہ نے بمباری کرکے ہزاروں فوجیوں کو شہید کیا تو مشرف نواز شریف کے پاوں پڑا کہ بچاو- نوازشریف نے فوج کا بھرم رکھنے کے لئیے اس راز کو چھپایا اور سعودی عربیہ کے ذریعے کلنٹن کو کہ کر یہ حملے رکوا ئے- اس پر ظلم بعض بہادر شہدا کی نعش بھی مشرف وصول نہیں کررہا تھا- جب بھارتیوں نے کرنل شیر خان وغیرہ کی ملٹری آئی ڈی بتائی تو مجبوراً نعش لینا پڑی اور بعد میں خفت مٹانے کے لیے کرنل شہید اور ایک اور شہید کو نشان حیدر دے دیا

واضح رہے کہ مشرف کی بیوی صہبا کوٹ باری نزد اوکاڑہ کی قادیانی ہے اور اسکا مانوں جمیل الرحمن اوکاڑہ کے قادیانیوں کا چیف ! مشرف سے پہلے جہانگیر کرامت بھی سیالکوٹ کا پکا قادیانی تھا اور وہ پمز میں چلڈرن اسپتال کے پروفیسر مشتاق کا ہم زلف تھا- پروفیسر مشتاق قادیانی عورت سے شادی کرکے قادیانی بنا تھا- نیوی کے سابق چیف نعمان بشیر بھی قادیانی تھا- واضح رہے کہ نعمان بشیر کا بھائی اور بہن بیوروکریسی میں اہم عہدوں پر رہے ہیں

سابق وزیر داخلہ رحمن مِلک بھی پکا قادیانی ہے- پیپلز پارٹی کا کرتا دھرتا فرحت اللہ بابر بھی پکا قادیانی ہے اور آصف علی زرداری کا سمدھی بھی- ن کے پرویز رشید کا بھائی وجاہت رشید بھی قادیانی تھا اگرچہ پریز رشید نے حامد میر کے ایک پروگرام میں اپنے قادیانی ہونے کی تردید کی ہے لیکن وہ مشکوک ضرور ہیں

پاکستان آرمی چیف باجوہ کے بارے میں بھی مشہور ہے کہ وہ قادیانی ہیں- انکے والد کو قادیانی بنایا گیا تھا – باجوہ کی بیوی کے بارے میں اکثر لوگ دعوہ کرتے ہیں کہ وہ پکی قادیانی ہیں- پاکستان فضائیہ کے ایک سابق چیف ذولفقار کے بارے میں بھی کہا جاتا ہے کہ وہ قادیانی تھا اور اس نے ربوہ پر فضائیہ کی سلامی دی تھی!

یاد رہے کہ پاکستان بنتے وقت فضائیہ میں مسلمانوں پر پابندی تھی جبکہ سکھ، عیسائی، ہندو اور قادیانیوں کو آزادی تھی- نتیجتا فضائیہ میں بئت بھاری تعداد میں قادیانی تھے- مرحوم نور خان نے عدالت میں انکشاف کیا تھا کہ مجبوراً انہیں اپنے قادیانی ہونے کا جھوٹا حلف نامہ جمع کرانا پڑا وگرنہ وہ تمام امتحانات میں بہت اچھی کامیابی کے باوجود فضائیہ میں داخل نہیں ہوسکتے تھے

1965 کی جنگ میں لاہور کی حفاظت کا کوئی انتظام نہیں تھا اسکا انکشاف فضائیہ کے سربراہ ایر مارشل نور خان نے ڈان میں شائع۔ دہ اپنے مضمون میں کیا- یہ نور خان کی محنت اور اللہ کا فضل تھا کہ اس جنگ میں پاک فضائیہ کو زبردست برتری حاصل رہی- بھارتی سورماں کو ہماری کالی بھیڑوں کی طرف سے گرین لائیٹ دی گئی تھی کہ کوئی مزاحمت نہ ہوگی لہذا بھارتی جرنیل دعوی کررہے تھے کہ شام کو لاہور جیمخانہ میں شراب پیں گے لیکن اللہ کو یہ منظور نہ تھا- دو گمنام پاکستانی نوجوان فوجیوں کے ریڈیو نے بھارتی فوج کے سگنل کیچ کرلئیے اور انہوں نے انتہائی دلیری سے اور حاضر دماغی سے بھاری فوج کے ایک بازو ہر مشین گنوں سے حملہ کردیا جس سے بھارت کی پیش قدمی کچھ گھنٹوں کے کیے رک گئی کہ کہیں انکے ساتھ دھوکہ تو نہیں ہوا اور کہیں انکو گھیر کر مارا تو نہیں جائیگا – دہلی میں دوبارہ میٹنگ ہوئی دوبارہ گرین لائٹ ملی تو پھر پیش قدمی شروع ہوئی لیکن جب تک لاہور جاگ چکا تھا – لاہور یوں کی بے مثل بہادری سے دشمن کے دانت کھڑے کردئیے گیے- لیکن جن لوگوں نے غداری کی تھی اور اس روز پاکستان کا کام نعوذوباللہ کوئی سزا نئیں دی گئی جسطرح کارگل کے قاتل اور غدار مشرف کو نہیں دی گئی- پشاور ہائیکورٹ کے مرحوم جج نے مشرف کو سزا سنائی تو مشرف کو بچانے والا یہ ہی نیازی اور اسکا وزیر قانون جو ہندو الطاف کا چمچہ ہے نے اسے بچایا- اس سے قبل غدار مشرف کو راولپنڈی کے ملیٹری کارڈیاکوجی اسپتال میں پناہ دی گئی- پشاور کے آرمی پبلک اسکول سے لے کر سقوط ڈھاک، اجمل قصاب کیس ، کامرہ ایر بیس اور مہران بیس ہر بھارتی حملوں میں بھی جا بجا قادیانی فنگر پرنٹ نظر آئیں گے

قادیانی مذہب انگریز یہودیوں نے بنایا تھا اور اسے پنڈت نہرو کی بھر ہور حمائت حاصل تھی- اسکا مقصد پاکستان کو حقیقی آزادی سے محروم رکھنا تھا اور آزادی کے بعد قادیانیوں وغیرہ کے ذریعے پاکستان پر بالواسطہ اپنی حکومت قائم رکھنا-

آج عمران نیازی کے دور میں اکثر اہم عہدوں پر قادیانی قابض ہوچکے ہیں- دنیا کے لالچ میں کئی کمزور ایمان کے لالچی لوگوں نے اپنی آخرت فروخت کرکے یہودیوں کے بنائیے اس مذہب میں شمولیت اختیار کی جن میں پاکستان کے پہلے وزیر خارجہ ظفراللہ تھا جسے اسرائیل نے عالمی عدالت کا جج بنوا دیا تھا- عنران نیازی کے پرنانا منشی گوہر علی اور نانا احمد حسن نے بھی انا ایمان بیچا اور قادیانی بنے- عمران نیازی کی ماں شوکت خانم پیدائیشی قادیانی تھیں اور عمران کے کچھ مانوں ڈکلیرڈ قادیانی ہیں-

واضح رہے کہ عرب ممالک کے اکثر سربراہ بھی یہودی کٹھ پتلی ہیں- ، حافظ اسد صدام حسین، بشار الاسد اور قدافی بھی یہودی کٹھ پتلیاں تھے – اسی طرح مصر کے جمال ناصر سی آئی کے تنخواہ دار ایجنٹ تھے- اور ان سب سے بڑھ کر ایران سو فیصد یہودی صیہونیوں کے قبضے میں ہے- حزب اللہ اور ایران کی اسرائیل دشمن بھڑکیں محض دکھانے کے لئیے ہیں- آجکل اسرائیل ایران کے ذریعے یمن کے حوثی قبائلی کو استعمال کرکے سعودی عربیہ کو ٹارگٹ کرنا چاہ رہا ہے جہاں اسے من پسند شہزادہ مل گیا ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s